32 total views, 1 views today

وکی پیڈیا کے مطابق امرتا پریتم (Amrita Pritam) شاعرہ اور ناول نگار 31 اگست 1919ء کو گوجرانوالہ میں پیدا ہوئیں۔
70 سے زائد کتابیں شائع ہو چکی ہیں جن میں شاعری کے علاوہ کہانیوں کے مجموعے ، ناول اور تنقیدی مضامین کے انتخابات بھی شامل ہیں۔ ہندوستان اور پاکستان کی تقسیم پر ان کی ایک ناول ’’پنجر‘‘ پر اسی نام سے فلم بھی بن چکی ہے۔ بھارتی ایوانِ بالا کی رکن رہی ہیں۔ پدم شری کا اعزاز بھی حاصل ہوا۔ اس کے علاوہ ’’ساہتیہ اکیڈمی ایوارڈ‘‘ اور دیگر اعزازات بھی حاصل ہو ئے جن میں پنجابی ادب کے لیے ’’گیان پیتھ ایوارڈ‘‘ بھی شامل ہے۔
ساحر لدھیانوی کے ساتھ ان کا معاشقہ ادبی دنیا کے مشہور معاشقوں میں شمار ہوتا ہے جس کی تفصیل تھوڑی بہت ان کی کتاب ’’رسیدی ٹکٹ‘‘ میں موجود ہے۔
امرتا پریتم کی سب سے شہرہ آفاق نظم ’’اج آکھاں وارث شاہ نوں‘‘ ہے۔ اس میں انہوں نے تقسیمِ ہند کے دوران ہوئے مظالم کا مرثیہ پڑھا ہے ۔
31 اکتوبر 2005ء دلی، بھارت میں انتقال کرگئیں۔




تبصرہ کیجئے