286 total views, 2 views today

وکی پیڈیا کے مطابق بالی ووڈ کے مشہور پسِ پردہ گلوکار اور غزل کار محمد رفیع 31 جولائی 1980ء کو ممبئی میں حرکتِ قلب بند ہونے کی وجہ سے انتقال کرگئے۔
آپ امرتسر کے کوٹلہ سلطان سنگھ گاؤں میں 24 دسمبر 1924ء کو پیدا ہوئے ۔ بتایا جاتا ہے کہ اس وقت آپ کی گلی میں ایک فقیر آتا تھا جو بلند آواز میں گیت گاتا تھا۔ آپ کو اُسے گنگناتا دیکھ کر آپ کے بڑے بھائی نے استاد وحید خان کی سرپرستی میں آپ کو تعلیم دلائی۔
آپ بہت سیدھے اور صاف دل انسان تھے ۔ کئی مرتبہ آپ نے بغیر ایک پیسہ لیے گیت گایا۔ ایک بڑے موسیقار نے آپ کی موت کے بعد اعتراف کیا کہ اُس کے پاس رفیع کو دینے کے لیے پیسے نہیں تھے ۔ گیت ختم ہونے کے بعد انہوں نے آپ سے نظریں نہیں ملائیں اور دنیا کو دکھانے کے لیے ایک خالی لفافہ پکڑا دیا۔ آپ نے وہ خالی لفافہ لے لیا، لیکن ملاقات کے بعد کبھی اس کا تذکرہ بھی نہیں کیا، جب بھی ملے مسکرا کر ملے۔
آپ کو آپ کے گیتوں پر 6 فلم فیئر ایوارڈ مل چکے ہیں۔ حکومت نے آپ کو پدم شری ایوارڈ سے بھی نوازا۔ آپ نے 4516 سے زیادہ نغمے گائے۔ وہ سارے گیت آج بھی کروڑوں لوگوں کی زبان پر ہیں۔ اس سے بڑا کوئی اور اعزاز نہیں ہو سکتا۔ آپ ایک ایسے فنکار تھے جنہوں نے درجنوں فنکاروں کی زندگی بنائی۔ فلم دوستی میں موسیقار لکشمی کانت پیارے لال کے نغموں کو اپنی آواز دینے کے بعد وہ نغمے بہت مقبول ہوئے اور دنیا نے اس جوڑی کو پہچانا۔




تبصرہ کیجئے