243 total views, 4 views today

اقتباس کے لغوی معنی ہیں روشنی لینا مگر ادب کی اصطلاح میں کسی اور کی تحریر میں سے کوئی منتخب حصہ کسی خاص مقصد کے لیے اپنے کلام میں درج کرنا اقتباس کہلاتا ہے۔
بسا اوقات کوئی مصنف کسی تخلیقی کام میں اپنے افکار و نظریات کی وضاحت کے لیے کسی مستند مصنف کی رائے کو مِن و عن پیش کرتا ہے جسے واوین میں لکھا جاتا ہے۔ اس سے مصنف کا مدعا و مقصد اپنی رائے یا مؤقف کی تائید ہوتا ہے۔
(اصنافِ نظم و نثر از ڈاکٹر محمد خاں و ڈاکٹر اشفاق احمد ورک، ناشر ’’الفیصل ناشران و تاجرانِ کتب‘‘، صفحہ 180 سے انتخاب)




تبصرہ کیجئے