131 total views, 4 views today

ایک جوتا فروش اکبر اِلہ آبادی کے پاس آیا، اور کہا کہ حضرت، میں نے جوتوں کی دکان کھولی ہے۔ اس لیے کوئی شعر ہوجائے، تو اکبرؔ نے کہا:
شو میکری کی کھولی ہے ہم نے دکان آج
روٹی کو ہم کمائیں گے جوتوں کے زور سے
(ڈاکٹر علی محمد خان کی کتاب کِشتِ زعفران مطبوعہ الفیصل پہلی اشاعت فروری 2009ء، صفحہ نمبر 86 سے انتخاب)




تبصرہ کیجئے