569 total views, 1 views today

ساحر لدھیانوی کے کسی دوست نے اس سے کہا: ’’یار ساحر! اب تو تمہاری زندگی ہر اعتبار سے آسودہ ہے، اب تمہیں شادی کرلینی چاہیے۔‘‘
ساحرؔ نے غیر معمولی طور پر سنجیدہ ہو کر جواب دیا: ’’چاہتا تو میں بھی ہوں، لیکن ایسی خاتون کے ساتھ کرنا چاہتا ہوں، جو کنواری ہونے کے ساتھ ساتھ انٹلکچوئل بھی ہو، لیکن ٹریجیڈی یہ ہے کہ یہ دونوں صفات ایک ہی وقت میں کسی ایک لڑکی میں نہیں ملتیں…… یا تو وہ کنواری ہوتی ہے یا انٹلکچوئل۔‘‘
(ڈاکٹر علی محمد خان کی کتاب ’’کِشتِ زعفران‘‘ مطبوعہ ’’الفیصل‘‘ پہلی اشاعت فروری 2009ء، صفحہ نمبر 127 سے انتخاب)