39 total views, 1 views today

صنعتِ عکس میں کلام کو یا کلام کے کسی حصے کو آگے پیچھے کرکے دوسرا مصرع اس طرح بنایا جاتا ہے کہ کلام میں خاص طرح کے معنی پیدا ہوجاتے ہیں، جیسے اقبالؔ کا یہ شعر ملاحظہ ہو:
پسند اس کو تکرار کی خو نہیں
کہ تُو مَیں نہیں اور مَیں تُو نہیں
اس طرح ایک اور شاعر کا یہ شعر ملاحظہ ہو:
ہم اور غیر دونوں یک جا باہم نہ ہوں گے
ہم ہوں گے وہ نہ ہوں گے، وہ ہوں گے ہم نہ ہوں گے
(’’منصف خان سحاب‘‘ کی تالیف ’’نگارستان‘‘ ، ناشر ’’مکتبۂ جمال، لاہور‘‘ کے صفحہ نمبر 166 سے انتخاب )




تبصرہ کیجئے