442 total views, 1 views today

کوتلیہ چانکیا (Kautila, Chankia) چوتھی صدی قبل از مسیح، ذات کا برہمن تھا اور اپنے زمانے کا ایک بڑا عالم تھا۔ اس کی تصنیف ’’ارتھ شاستر‘‘ سیاست پر ایک اہم تصنیف ہے۔ اس کتاب کا موضوع ’’انتظامِ سلطنت‘‘ اور ’’علمِ اخلاق‘‘ ہے۔
کوتلیہ چانکیا نے موریہ سلطنت کے بانی چندر گپت موریہ کی تعلیم و تربیت کی تھی۔ چانکیہ، حملۂ سکندر اعظم کے زمانے میں ٹیکسلا یونیورسٹی میں معلم تھا۔
جین روایات کے مطابق وہ ایک عام غریب آدمی تھا اور آخری نندا حکمران، دھن نندا کے عہد میں دولت کمانے کی غرض سے پاٹلی پترا گیا تھا۔ وہاں وہ آوارہ گردی کرتا ہوا ایک شاہی خیرات گھر (دان شالہ) میں گھس گیا اور اندر جا کر ناظم کی کرسی پر بیٹھ گیا، مگر اُسے بادشاہ نے بے عزت کرکے دان شالہ سے نکال دیا۔ اس بات سے اس کے دل میں بادشاہ کے خلاف کدورت پیدا ہوگئی اور اُس نے مو قع پاکر بادشاہ کے ایک بیٹے کو اغوا کرکے قتل کر دیا۔ اسی دوران میں اُسے چندر گپت مل گیا۔ جب چندر گپت بادشاہ بنا، تو اس نے کوتلیہ چانکیہ کو اپنا مشیرِ خاص بنا لیا۔
چندر گپت کے لیے اس نے ’’ارتھ شاستر‘‘ تصنیف کی تھی، جو حکومت کرنے کے فن پر لکھی گئی ایک اہم کتاب ہے۔
(’’تاریخِ عالم کی ڈکشنری‘‘ از ’’جان جے بٹ‘‘، تحقیق و ترجمہ ’’اخلاق احمد قادری‘‘، سنِ اشاعت 2019ء کے صفحہ نمبر 353 سے انتخاب)




تبصرہ کیجئے